PK Press

عمران خان کے دور میں وزیراعظم ہاوس کے اخراجات کتنے کم ہوئے؟

اسلام آباد(نیوزڈیسک)کابینہ ڈویژن نے سابق وزیراعظم عمران خان کے دورِ حکومت میں کفایت شعاری کے ذریعے وزیراعظم ہاوس کے اخراجات میں کمی کے دعووں کے حوالے سے انکشاف کیا ہے کہ چار برس میں 31 کروڑ نہیں دراصل 9کروڑ روپے ہی بچائے گئے تھے۔
سابق وزیراعظم عمران خان کے دور حکومت میں یہ دعویٰ کیا جاتا رہا ہے کہ انھوں نے کفایت شعاری کے ذریعے وزیراعظم ہاوس کے اخراجات 59 کروڑ سے کم کرکے 28 کروڑ تک محدود کر دیے تھے۔
لیکن کابینہ ڈویژن کی سینیٹ آف پاکستان میں پیش کی گئی رپورٹ کے مطابق وزیراعظم ہاوس کے اخراجات 59 کروڑ نہیں بلکہ 50 کروڑ 9 لاکھ روپے تھے جنھیں کم کرکے 28 کروڑ نہیں بلکہ 30 کروڑ روپے تک لایا گیا۔
اعدادوشمار کے مطابق 2017-18 میں وزیراعظم ہاوس کے اخراجات 59 کروڑ، 2018-19 میں 37 کروڑ، 2019-20 میں 31 کروڑ 60 لاکھ جبکہ 2020-21 میں 30 کروڑ 45 لاکھ سے زائد رہے۔
کفایت شعاری کی پالیسی کے تحت اگرچہ اخراجات میں مسلسل کٹوتی کی جاتی رہی لیکن وزیراعظم ہاوس کے اخراجات میں سب سے بڑی کٹوتی جو کل اخراجات کا 55 فیصد بنتی تھی وہ ملازمین کی تنخواہوں اور مراعات کی مد میں کی گئی۔
2017-18 کے بجٹ میں یہ رقم 34 کروڑ سے زائد تھی جبکہ 2020-21 میں یہ رقم 22 کروڑ تک لائی گئی۔
کابینہ ڈویژن کا کہنا ہے کہ وزیراعظم ہاوس سے غیر ضروری عملے کی کمی ایک مسلسل عمل ہے۔ 2013 میں وزیراعظم ہاوس کی 494 پوسٹوں میں سے 258 کم کر دی گئی تھیں۔ 2018 سے 2021 کے دوران وزیراعظم ہاوس کی 152 پوسٹیں کم کی گئیں۔

براہ کرم ہمیں فالو اور لائک کریں:

پڑھنے کے پچھلے

کورین گلوکار داؤد کم نے عمرے کی سعادت حاصل کرلی

پڑھنے کے اگلے

چودھری شجاعت کو پارٹی صدارت سے ہٹانے کا کیس،الیکشن کمیشن سے اہم خبر

ایک جواب دیں چھوڑ دو

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے