PK Press

آرمی چیف کے بارے میں وزیراعظم کی ایڈوائس پر عمل کروں گا ،صدر مملکت

صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے کہا ہے کہ آرمی چیف کے بارے میں وزیراعظم کی ایڈوائس آئی تو اس پر عمل کریں گے۔
نجی ٹی وی جیو نیوز کے ذرائع کے مطابق صدر مملکت عارف علوی نے قریبی دوستوں سے گفتگو کی جس میں انہوں نے آرمی چیف کی تعیناتی کے حوالے سے بات کی۔
صدر مملکت نے کہا کہ آرمی چیف کے بارے میں وزیراعظم کی ایڈوائس آئی تو اس پر عمل کریں گے۔
عارف علوی نے دوستوں سے گفتگو میں کہا کہ میرے پاس وزیراعظم کی ایڈوائس روکنے کا قانونی اختیار نہیں لہذا مملکت کے معاملات میں کبھی رخنہ نہیں ڈالا۔
اس سے قبل وفاقی وزیر خزانہ اسحاق ڈار نے صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی سے اہم ملاقات کے دوران اہم عہدے پر تقرری سمیت دیگر معاملات پر مشاورت کی۔
وفاقی وزیر خزانہ اسحاق ڈار نے جمعہ ایوان صدر اسلام آباد میں صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی سے ملاقات کی۔
دونوں کے درمیان ملاقات آدھا گھنٹے سے زیادہ وقت تک جاری رہی۔ اسحاق ڈار اور صدر کے درمیان اہم تقرری اور بعض دیگر امور پر مشاورت ہوئی۔
اس موقع پر وزیر خزانہ نے ملک کی بہتری کیلئے مل کر آگے بڑھنے کی خواہش کا اظہار، وزیر خزانہ نے صدر کو معاشی صورت حال پر بھی اعتماد میں لیا۔ جب کہ وزارت خزانہ کی کارکردگی اور آئی ایم ایف سے معاملات پر بھی گفتگو کی گئی۔
ملاقات کے دوران وفاقی وزیر خزانہ نے صدر مملکت کو ملک کی مجموعی اقتصادی اور مالیاتی صورت حال پر بریف کیا۔ وزیر خزانہ نے صدر مملکت کو پاکستان کے عوام بالخصوص ملک کے محروم علاقوں کی غیر مراعات یافتہ آبادی اور سیلاب متاثرین کو ریلیف فراہم کرنے کیلئے حکومت کی جانب سے کیے گئے مختلف اقدامات سے بھی آگاہ کیا۔
قبل ازیںاہم ترین تقرری اور ملک کی مجموعی سیاسی صورتحال پر حکومت و اتحادی جماعتوں کی ابتدائی مشاورت مکمل ہوگئی۔
ابتدائی مشاورت میں اتحادیوں نے وفاقی حکومت کو مکمل تعاون کا یقین دلادیا۔ وفاقی وزیر خزانہ کی یکے بعد دیگرے مولانا فضل الرحمان اور سابق صدر آصف علی زرداری سے طویل ملاقاتیں ہوئیں، جن میں ملک کی مجموعی سیاسی صورتحال ، عمران خان کے لانگ مارچ سمیت دیگر امور پر تبادلہ خیال ہوا۔
ملاقات کے دوران سابق صدر آصف علی زرداری اور مولانا فضل الرحمن کے ساتھ میاں نواز شریف کی ٹیلیفونک گفتگو بھی ہوئی۔
حکومتی اتحادیوں نے وزیراعظم شہباز شریف کو مکمل حمایت کا یقین دلا دیا اور پیغام دیا کہ اہم تقرری سمیت دیگر اہم فیصلوں پر وزیراعظم آئینی اختیار کے مطابق اقدام کریں، ملکی داخلی استحکام، معاشی و سیاسی استحکام کے لئے مل کر آگے بڑھیں گے۔
ملاقاتوں میں سابق وزیراعظم عمران خان کے بیانیے اور لانگ مارچ کو اہمیت نہ دینے کا فیصلہ کیا گیا اور تینوں بڑی اتحادی جماعتوں کا مستقبل قریب میں مل کر چلنے پر اتفاق کیا۔
وزیر خزانہ نے وزیراعظم شہباز شریف کے علاوہ نواز شریف کا بھی اہم پیغام پہنچایا۔
طبیعت بہتر ہوتے ہی وزیراعظم شہباز شریف جلد اتحادیوں کے ساتھ براہ راست بھی ملاقات کریں گے۔

براہ کرم ہمیں فالو اور لائک کریں:

پڑھنے کے پچھلے

اداکار شفیع محمد کو مداحوں سے بچھڑے 15 برس بیت گئے

پڑھنے کے اگلے

لانگ مارچ: عمران خان سے کہیں قانون کی پاسداری کریں، چیف جسٹس

ایک جواب دیں چھوڑ دو

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے