PK Press

وفاقی دارلحکومت اسلام آباد میں فوڈ اتھارٹی کے قیام کا فیصلہ

52 سال بعد وفاقی دارلحکومت اسلام آباد میں فوڈ اتھارٹی کے قیام کا فیصلہ ،ضلعی انتظامیہ اور سی ڈی اے کے فوڈ سٹاف کو بھی اتھارٹی میں ضم کرنے کی تیاری شروع کردی گئی ۔
اتھارٹی کے قیام کے لیے 20 نومبر کو تحریری ٹیسٹ ہونگے ۔
فوڈ اتھارٹی کے لیے ڈپٹی ڈائریکٹر آپریشن ، فوڈ سیفٹی آفیسرز اور اسٹنٹ فوڈ سیفٹی آفیسرز رکھے جائیں گے ،
فوڈ اتھارٹی کے لیے لیب اسسٹنٹ بھی انٹرویو ہونگے ،
کیپٹن ریٹائرڈ عثمان یونس نے کہا کہ فوڈ اتھارٹی سے قبل ڈپٹی کمشنر کے ماتحت فوڈ ڈائریکٹوریٹ کام کر رہا ہے ، سی ڈی اے میں بھی ایک ڈائریکٹوریٹ کام کر رہا ہے ۔تاہم ایک نئی اتھارٹی کا قیام عمل میں لایا جا رہا ہے ،
چیئرمین مین سی ڈی اے نے کہا کہ اسلام آباد میں ایک خود مختار فوڈ اتھارٹی کی ضرورت ہے ، بہت جلد ٹیسٹ انٹرویو کا عمل مکمل کرلیا جائے گا ،
چئیرمین و چیف کمشنر اسلام آباد کیپٹن ریٹائرڈ عثمان یونس نے کہا کہ فوڈ اتھارٹی کے قیام کے بعد فوڈ ٹیسٹ کے لیے موبائل وینز سے چیکنگ کا عمل کیا جائے گا ، فوڈ اتھارٹی کے قیام کا بل نومبر 2021 میں علی نواز اعوان نے ایوان میں پیش کیا ۔
علی نواز اعوان کی تحریک کا بل قومی اسمبلی سے منظور ہوگیا تھا۔یہ بل سینٹ کی قائمہ کمیٹی سے بھی منظور ہوگیا تھا۔

براہ کرم ہمیں فالو اور لائک کریں:

پڑھنے کے پچھلے

آمدن سے زائد اثاثے، اسحاق ڈار کو عدالت سے بڑا ریلیف مل گیا

پڑھنے کے اگلے

چینی صدر کا  چین امریکہ تعلقات کی تر قی کے لئے باہمی تعلقات کو فروغ دینے پر زور

ایک جواب دیں چھوڑ دو

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے