PK Press

سیاسی صورتحال و تقرری معاملہ، نواز شریف نے اتحادیوں کو اعتماد میں لے لیا

مسلم لیگ ن کے قائد نواز شریف نے ملکی سیاسی صورتحال اور نئے آرمی چیف کی تعیناتی کے معاملے پر اتحادیوں کو اعتماد میں لے لیا۔
میڈیا رپورٹس کے مطابق لندن میں موجود نواز شریف نے اتحادی جماعتوں کے رہنماں سے رابطے کیے ہیں، اس دوران وزیراعظم شہباز شریف اور مریم نواز بھی موجود تھے۔
نوازشریف نے سابق صدر آصف زرداری ،پی ڈی ایم سربراہ مولانا فضل الرحمان، سردار اختر مینگل ،خالد مقبول صدیقی اور محمود اچکزئی سے موجودہ صورتحال پر گفتگو کی۔
اتحادی حکومت نے ملک میں انتشار اور بدامنی کی کوئی بھی کوشش کامیاب نہ ہونے دینے کے عزم کا بھی اعادہ کیا، طے کیا گیا کہ احتجاج یا لانگ مارچ عمران خان کا حق سہی مگر قومی سلامتی پر کوئی سمجھوتا نہیں ہوگا۔
نوازشریف کا کہنا تھا کہ عمران خان ایک انتظامی معاملے کو اپنی سیاست کی نظر کرنا چاہتے ہیں، ماضی کی روایات اور قانون کو سامنے رکھتے ہوئے نئی تقرری میرٹ پر شفاف طریقے سے ہوگی۔
آصف زرداری کا کہنا تھا کہ عمران خان اس تقرری کو متنازع بناکر قومی ریاستی و دفاعی اداروں کو کمزور کرنا چاہتے ہیں، ایسی کوئی کوشش کسی صورت کامیاب نہیں ہونے دی جاے گی۔
وزیراعظم شہباز شریف نے کہا کہ یہ شخص ہر ادارے اور اس کی قیادت کو اپنی ہٹ دھرمی کی نذرکرنا چاہتا ہے۔
سیاسی رہنماوں نے نئے آرمی چیف کی تعیناتی کے معاملے پر کوئی دبا قبول نہ کرنے پراتفاق کیا۔
شہباز شریف وطن واپسی پر پی ڈی ایم کا باقاعدہ اجلاس بلا کر سب کو اعتماد میں بھی لیں گے، اس کے علاوہ عام انتخابات سمیت دیگر سیاسی فیصلے بھی مشاورت سے کرنے پر اتفاق کیا گیا۔
عمران خان کے قومی سلامتی کے خلاف بیانیے پر قانونی کارروائی تیز کرنے پر بھی اتفاق کیا گیا ہے۔

براہ کرم ہمیں فالو اور لائک کریں:

پڑھنے کے پچھلے

وزیراعظم کی لندن میں طبیعت ناساز، وطن واپسی موخر کردی

پڑھنے کے اگلے

دی لیجنڈ آف مولا جٹ میں ماہرہ کا پنجابی لہجہ بہت برا تھا،میرا

ایک جواب دیں چھوڑ دو

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے