PK Press

چین کا اقلیتوں کے حقوق کے حوالے سے غیر معقول الزامات کا بھر پور جواب

 

اقوام متحدہ میں چین کے مستقل نمائندے چانگ جون نے اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے اعلیٰ سطح اجلاس سے خطاب کرتے ہوئےمقامی لوگوں کے حقوق سے متعلق اعلامیہ کی منظوری کی 30 ویں سالگرہ کی یاد میں تقریر کی۔جمعرات کے روز چینی میڈ یا کے مطا بق انہوں نے امریکہ اور برطانیہ کی جانب سے چین کے خلاف لگائے گئے الزامات کو مسترد کیا اور ان کاتفصیلی جواب دیا۔

چانگ جون نے کہا کہ چین کے سنکیانگ ویغور خود اختیار علاقے میں ہان، ویغور اور قازق سمیت 56 قومیتیں آباد ہیں، تمام قومیتوں کے لوگوں کی مشترکہ کوششوں سے سنکیانگ کی معیشت مسلسل ترقی کر رہی ہے، معاشرہ ہم آہنگ اور مستحکم ہے، لوگوں کے معمولات زندگی روز بروز بہتر ہورہے ہیں۔ ثقافت ترقی کر رہی ہے، اور تمام مذاہب کے لوگ ہم آہنگی کے ساتھ رہ رہے ہیں۔لیکن افسوس کے ساتھ کہنا پڑتا ہے کہ امریکہ، برطانیہ اور یورپی یونین جیسے چند ممالک کے نمائندوں نے حقائق کو نظر انداز کیا اور اقوام متحدہ کی جنرل اسمبلی کے عام مباحثے اور آج کے اجلاس کو چین کے خلاف بلاجواز الزامات لگانے کے لیے غلط استعمال کیا جس کی چین سختی سے مخالفت کرتا ہے۔ چین ان تمام الزامات کو سختی سے مسترد کرتا ہے.

براہ کرم ہمیں فالو اور لائک کریں:

پڑھنے کے پچھلے

امریکہ کو چینی کمپنیوں کے خلاف اپنے اوچھے ہتکنڈے بند کر نے چاہیئں

پڑھنے کے اگلے

امریکہ، برطانیہ اور آسٹریلیا کے "جوہری تعاون” سے عالمی امن کو خطرہ

ایک جواب دیں چھوڑ دو

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔