PK Press

ملتان سکھر موٹروے پر بس اور ٹینکر میں تصادم، 20 افراد جاں بحق

motorway accident

لاہور(نیوزڈیسک)ملتان سکھر موٹروے پر سلیپر بس کے

آئل ٹینکر سے ٹکرانے کے نتیجے میں آگ لگ گئی،

جس سے 20 مسافر جاں بحق ہو گئے جبکہ 6 افراد زخمی ہیں،

جنہیں اسپتال منتقل کیا گیا ہے۔

ترجمان موٹروے پولیس کے مطابق تصادم ہوتے ہی بس کو آگ لگ گئی۔

حادثے کے فوراً بعد موٹروے ایم 5 کو ٹریفک کے لیے بند کردیا گیا ۔

اطلاع ملتے ہی مقامی پولیس ، ریسکیو 1122 اور افسران پہنچ جائے حادثہ پر پہنچے

جب کہ آگ بجھانے والی ٹیموں نے کارروائی شروع کی۔

آئی جی خالد محمود کی ہدایت پر موٹر وے پولیس نے

ایمرجنسی کرائسز سنٹر تشکیل دیدیا۔
ابتدائی اطلاعات کے مطابق موٹروے پولیس نے جلتی بس سے کچھ مسافروں کو بحفاظت نکالا

جب کہ بس میں تقریباً 25 افراد سوار تھے۔

امدادی ٹیموں کو بس میں لگی آگ بجھانے میں کئی گھنٹے لگے ۔

عینی شاہدین کے مطابق آگ اتنی شدید تھی کہ کئی میل دور سے شعلے بلند ہوتے دکھائی دے رہے تھے۔

وزیراعظم شہبازشریف نے ٹوئٹر پر اپنے پیغام میں کہا کہ

جلال پور پیر والا انٹر چینج پر ہونے والا آئل ٹینکر کا حادثہ نہایت ہی افسوناک ہے ۔

حادثے میں 20 قیمتی جانوں کے ضیاع پر دکھی اور رنجیدہ ہوں۔

میری دعائیں غم زدہ خاندانوں کے ساتھ ہیں۔

اللہ تعالی سے دعا ہے کہ وہ مرحومین کو اپنے جوار رحمت میں جگہ دے اور پسماندگان کو صبر جمیل عطا فرمائے۔

 

وزیراعلیٰ پنجاب چودھری پرویز الہٰی نے بھی ملتان موٹروے ایم فائیو پر ٹریفک حادثے

میں ہلاکتوں پر اظہار افسوس کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ

پنجاب حکومت جاں بحق افراد کے لواحقین کے دکھ میں برابر کی شریک ہے،

وزیراعلیٰ نے ہدایت کی کہ زخمیوں کو علاج معالجے کی بہترین سہولتیں فراہم کی جائیں،

پرویز الہٰی نے کمشنر ملتان سے حادثے سے متعلق رپورٹ طلب کر لی ۔

وزیراعلیٰ پنجاب نے کہا کہ ہر پہلو سے انکوائری کرکے غفلت کے ذمہ داروں کا تعین کیا جائے۔

دوسری جانب اسپیکر قومی اسمبلی راجا پرویز اشرف نے

ملتان میں جلال پور انٹرچینج کے قریب بس اور ٹینکر میں تصادم پر افسوس کا

اظہار کرتے ہوئے متاثرہ خاندانوں سے ہمدردی اور زخمیوں کے لیے صحتیابی کی دعا کی ہے۔

 

براہ کرم ہمیں فالو اور لائک کریں:

پڑھنے کے پچھلے

عمران خان کے اثاثوں کی تفصیلات سامنے آگئیں

پڑھنے کے اگلے

ممنوعہ فنڈنگ کیس؛ اسلام آباد ہائی کورٹ کا لارجر بینچ بنانے کا فیصلہ

ایک جواب دیں چھوڑ دو

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے