PK Press

سیلاب پرسیاست نہیں کریں گے،وزیراعظم شہباز شریف

pm shehbaz shairf

صحبت پور(نیوزڈیسک)وزیراعظم محمد شہباز شریف نے سیلاب سے متاثرہ علاقے صحبت پورمیں امدادی کاموں کومزید تیزکرنے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا ہے کہ متاثرہ علاقوں سے پانی نکالنے کا کام زیادہ تیزی سے کیا جائے، متاثرہ علاقوں میں پینے کا پانی فوری پہنچائیں گے ، سیلاب پرسیاست نہیں کریں گے۔ بدھ کو وزیراعظم نے بلوچستان کے سیلاب سے متاثرہ علاقے صحبت پور کا دورہ کیا جہاں انہیں سیلاب کی تباہ کاریوں، متاثرین کی امداد اور تباہ شدہ انفراسٹرکچرکی بحالی کیلئے جاری کاوشو ں سے آگاہ کیا گیا۔

وزیراعظم کو بتایا گیا کہ صحبت پوربلوچستان میں سیلاب سے سب سے زیادہ متاثر ہوا ہے یہاں نقصانات کا مشترکہ سروے جلد مکمل کرلیا جائے گا، متاثرہ خاندانوں کو25ہزار روپے فی خاندان بے نظیرانکم سپورٹ پروگرام کے تحت فراہم کئے جارہے ہیں ، اب تک ایک لاکھ66ہزار خاندانوں کویہ رقم دی جاچکی ہے، متاثرین کو دو لاکھ50ہزار مچھر دانیاں فراہم کی گئی ہیں جبکہ اڑھائی لاکھ مزید فراہم کریں گے، اس کے علاوہ خیموں کی فراہمی کا کام بھی جاری ہے۔

وزیراعظم کو بتایا گیا کہ اس علاقے میں 122 کیمپ قائم کئے گئے ہیں ، میڈیکل کیمپس میں 4لاکھ سیزیادہ مریضوں کو علاج کی سہولت فراہم کی گئی ، پینا ڈول اور ملیریا کی ادویات موجود ہیں یہاں سانپ کے کاٹے سے دو اموات ہوئیں تاہم اس پر قابو پالیا گیا ہے ، حاملہ خواتین کی رجسٹریشن جاری ہے، میڈیکل کیمپ میں گائنا کالوجسٹ سمیت دیگرمتعلقہ عملہ موجود ہے، مقامی ایم پی اے نے وزیراعظم کا خیرمقدم کرتے ہوئے کہا کہ یہاں پر لوگوں کے گھر اور زراعت تباہ ہوچکی ہے،شہر سے پانی نکالنے کا انتظام کیا جائے۔

انہوں نے کہا کہ یہ قدرتی آفت بہت بڑی ہے، اس میں بحالی کے حوالے سے مشکلات بھی بہت ہیں۔ وزیراعظم کو بتایا گیا کہ ہنگامی امدادی کاموں کیلئے وفاق سے مزید معاونت کی ضرورت ہے، دیہی علاقوں میں انٹرنیٹ کی بحالی کے حوالے سے کچھ مشکلات ہیں تاہم شہری علاقوں میں انٹرنیٹ بحال کردیا گیا ہے۔

وزیراعظم نے اس موقع پر متاثرین کی بحالی کیلئے امدادی کاموں کو تیزکرنے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ وفاق سے اگرمزید فنڈز چاہئیں تو آگاہ کریں، ہم نے سیلاب پرسیاست نہیں کرنی، یہ ایک امتحان ہے، سیلابی پانی کے حوالے سے اس سے بڑی آفت ماضی میں نہیں دیکھی، اس پر صبرسے کام لینا ہوگا ، حکومتی مشینری فوری طرح فعال ہے ،

صحبت پور سب سے زیادہ متاثر ہوا ہے، پینے کے پانی کی قلت کا نوٹس لیتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ فوری طور پر ہیلی کاپٹرکے ذریعہ پانی کی بوتلیں مہیا کی جائیں گی۔ انہوں نے حکام کو ہدایت کی کہ پینے کے پانی کی عدم فراہمی کی شکایت نہیں آنی چاہیے۔وزیراعظم نے کہا کہ مزید خیموں کا آرڈر دیا گیا ہے یہ خیمے بلوچستان سے سیلاب سے متاثرہ علاقوں میں دیئے جائیں گے ، متاثرہ علاقوں میں وبائی امراض پھیل رہے ہیں ان کو کنٹرول کرنا ضروری ہے

 

براہ کرم ہمیں فالو اور لائک کریں:

پڑھنے کے پچھلے

پی ٹی آئی نے مرحلہ وار استعفوں کی منظوری سپریم کورٹ میں چیلنج کردی

پڑھنے کے اگلے

سیلاب متاثرین کی امداد ،غیر ملکی عطیات کی تفصیلات جاری

ایک جواب دیں چھوڑ دو

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔