PK Press

حکومت کے پاس 13 ماہ، میرے پاس شاید اتنا وقت نہیں،وزیر خزانہ

miftah ismaiel

کراچی (نیوزڈیسک)وفاقی وزیر خزانہ مفتاح اسماعیل کا کہنا ہے کہ حکومت کے پاس 13 ماہ ہیں لیکن میرے پاس شاید اتنا وقت نہیں ہے۔
کراچی میں ایک تقریب سے خطاب کرتے ہوئے مفتاح اسماعیل کا کہنا تھا پاکستان میں کوئی بھی ٹیکس دینا نہیں چاہتا، ہر ملک سے پیسہ مانگ رہے ہیں، بہت شرم آتی ہے۔
مفتاح اسماعیل نے کہا کہ پی ٹی آئی نے آئی ایم ایف سے معاہدہ توڑا تھا، نومبر میں معاہدہ کیا اور پھر ایندھن پر سبسڈی دے دی۔
وزیر خزانہ کا کہنا تھا حکومت میں آنے کے بعد ہماری پہلی ترجیح آئی ایم ایف پروگرام کی بحالی تھی، حکومت سنبھالنے کے بعد فورا آئی ایم ایف سے رابطہ کیا اور ملک کو ڈیفالٹ ہونے سے بچایا۔
ان کا کہنا تھا کہ حکومت پاکستان نے کبھی ڈیفالٹ نہیں کیا، حکومت پاکستان آئندہ بھی ڈیفالٹ نہیں کرے گی۔
وزیر خزانہ مفتاح نے کہا کہ حکومت نے مشکل وقت میں مشکل فیصلے کیے ،پی ٹی آئی نے آئی ایم ایف سے معاہدہ کیا اور پھر خلاف ورزی کی۔
کورونا آیا توآئی ایم ایف میں بریک آیا اور ورلڈ بینک نے امداد دی۔
انہوں نے کہا کہ پچھلے سال کرنٹ اکاونٹ خسارہ ساڑھے 17 ارب ڈالر کا ہو گیا تھا اور حکومت میں آنے کے بعد آئی ایم ایف پروگرام کی بحالی ترجیح تھی۔ پرویز مشرف کے دور میں کرنٹ اکاونٹ خسارہ 8.1 تھا۔ کارباری طبقے کو ٹیکس نیٹ میں لا رہے ہیں۔
مفتاح اسماعیل نے کہا کہ پاکستان میں آبادی بڑھ گئی ہے اور معیشت کا حجم بھی بڑھ گیا ہے۔ دنیا میں اگر 10 بچے اسکول سے باہر ہیں تو ان میں ایک پاکستانی ہے۔
انہوں نے کہا کہ میں دو بار کراچی سے الیکشن لڑا اور ہار گیا لیکن اگر اب ہارا تو پھر الیکشن نہیں لڑوں گا۔

براہ کرم ہمیں فالو اور لائک کریں:

پڑھنے کے پچھلے

چین کی امریکہ کے ایکسپورٹ کنٹرول کے مسلسل غلط استعمال پر تنقید

پڑھنے کے اگلے

آئی ایم ایف نے پاکستان سے متعلق کنٹری رپورٹ جاری کر دی

ایک جواب دیں چھوڑ دو

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔