PK Press

بادی النظر میں ملزم شہباز گل نے دفعہ 131 کا جرم کیا ، عدالت کا تفصیلی فیصلہ جاری

shehbaz gill

اسلام آباد(نیوزڈیسک)اداروں میں بغاوت پر اکسانے کا مقدمہ ،شہباز گل کی درخواست ضمانت پر اسلام آباد کی سیشن کورٹ کا تفصیلی فیصلہ جاری کردیا گیا۔
ایڈیشنل سیشن جج ظفر اقبال نے 8 صفحات پر مشتمل تفصیلی فیصلہ تحریر کیا ۔
ملزم شہباز گل پارٹی لیڈر ہیں اور متنازعہ بیان کسی اندرونی اجلاس میں نہیں دیا،
فیصلے میں کہا گیا کہ شہباز گل کا بیان قابل احترام ادارے پاک فوج میں نظم و ضبط خراب کرنے کے لیے کافی ہے،
شہباز گل کا بیان عوام مفاد میں ہے نہ ہی ملکی سالمیت کے حق میں،
قانون ہر ملزم کو ضمانت پر رہائی کی رعایت نہیں دیتا،
شہباز گل کے وکیل نے بیان پر دل آزاری ہونے پر غیر مشروط معافی کی پیشکش کی،
تحریری فیصلے میں کہا گیا کہ ملزم کے وکیل کے مطابق شہباز گل کو سیاسی انتقام کا نشانہ بنانے کے لیے مقدمہ بنایا گیا،
ملزم کے وکیل کے مطابق مقدمہ میں لگی دفعات نہیں بنتی،
پراسیکیوٹر کے مطابق ملزم نے پروگرام کے ٹرانسکرپٹ کو قبول کیا ہے،
بادی النظر میں ملزم شہباز گل نے دفعہ 131 کا جرم کیا ہے،
ملزم شہباز گل پڑھا لکھا ہے لیکن اس نے یہ بیان قومی میڈیا کو دیا،
عدالت کا کہنا تھا کہ بادی النظر میں شہباز گل ناقابل ضمانت جرم کرنے کے مرتکب ہوئے،
ریکارڈ پر شہباز گل کے خلاف ٹھوس شواہد موجود ہیں،

 

براہ کرم ہمیں فالو اور لائک کریں:

پڑھنے کے پچھلے

چین اور پاکستان کی حقیقی دوستی کا سیلاب کے سامنےعمدہ مظاہرہ

پڑھنے کے اگلے

چوہدری سالک کی رضوان صادق کے گھر آمد، بیٹے کی سالگرہ پر مبارکباد

ایک جواب دیں چھوڑ دو

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔