PK Press

چین کا نئی توانائی کی ترقی کے لیے باضابطہ منصوبہ جاری

 

چین کے قومی کمیشن برائے ترقی و اصلاحات اور توانائی کے قومی محکمے نے” نئے عہد میں نئی توانائی کی اعلی معیاری ترقی پر عمل درآمد کا منصوبہ ” جاری کیا ۔ منگل کے روز چینی میڈ یا کے مطا بق اس منصوبے کا مقصد 2030 تک ہوا کی توانائی اور شمسی توانائی کی کل تنصیبی صلاحیت 1.2 بلین کلوواٹ تک پہنچانے کے ہدف کی تکمیل کے لیے توانائی کا صاف شفاف اور موثر نظام بنانا ہے۔
اپریل کے اواخر تک چین میں نئی توانائی سے پیدا ہونےوالی بجلی کی تنصیبی صلاحیت تقریباً۷۰کروڑ کلوواٹ تک پہنچ چکی ہے جو پورے ملک کا انتیس فیصد ہے اور دنیا میں مسلسل پہلے نمبر پر ہے۔
"نئے عہد میں نئی توانائی کی اعلی معیاری ترقی پر عمل درآمد کے منصوبے ” میں سات پہلوؤں سے اکیس اقدامات پیش کیے گئے ہیں جس کے مطابق نئی توانائی کی دریافت اور استعمال کے ماڈل کو جدید بنایا جائے گا، صحرائی علاقوں پر توجہ مرکوز کرتے ہوئے بڑے پیمانے پر ونڈ پاور اور فوٹووولٹک بیسز کی تعمیر کو تیز کیا جائے گا۔اس کے علاوہ ، نئی توانائی کے تناسب میں بتدریج اضافے کے لیے توانائی کے نئے نظام کی تشکیل کو بھی تیز کیا جائے گا ،نئی توانائی کی صنعت کے بین الاقوامی معیار کو بلند کیا جائے گا اور اس کی معاونت کے لیے مالی و مالیاتی پالیسی کو بہتر بنایا جائے گا۔

https://pkpress.net/2022/05/26/9825/

https://dailysubnews.com/1421-2/

براہ کرم ہمیں فالو اور لائک کریں:

پڑھنے کے پچھلے

چین کا مئی میں مینوفیکچرنگ سیکٹر پی ایم آئی 49.6 فیصد رہا

پڑھنے کے اگلے

چین اور امریکہ کی انسداد وبا کوششوں کا موازنہ

ایک جواب دیں چھوڑ دو

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔