PK Press

علمائے کرام نے بیرونی ساز ش کی شفاف تحقیقات کی حمایت کردی

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)عمران خان کی حقیقی آزادی و غلامی نامنظور تحریک کو ایک اور بڑی کامیابی میسر آگئی ،تمام بڑے مکاتبِ فکر کے نمائندہ نامور علمائے کرام،مشائخ عظام اور جید مذہبی و دینی شخصیات نے حقیقی آزادی کی تحریک کی بھرپور تائید و حمایت کا اعلان کردیا ۔چیئرمین پاکستان تحریک انصاف عمران خان سے تفصیلی ملاقات ہوئی جس میں وائس چیئرمین شاہ محمود قریشی، سینیٹر اعجاز احمد چودھری اور علی محمد خان ،ثروت اعجاز قادری، صاحبزادہ ابوالخیر زبیر، صاحبزادہ حامد رضا، محمد اجمل قادری، مولانا گل نصیب خان، ڈاکٹر سبیل اکرام، ناصر شیرازی، مولانا شجاع الملک، ڈاکٹر احسان دانش، سید ضیا اللہ شاہ بخاری سمیت دیگر ملاقات کرنے والوں میں شامل ہیں ۔چیئرمین تحریک انصاف عمران خان سے ملاقات کرنے والی شخصیات میں تمام مکاتبِ فکر کی جید شخصیات شامل تھیں ۔

 

 

ملاقات میں سازش کے نتیجے میں منتخب جمہوری حکومت کے خاتمے پر شدید تشویش کا اظہار کیا گیا۔سازش کی تحقیقات کیلئے اعلی سطحی عدالتی کمیشن کے قیام اور کھلی سماعت میں تحقیقات کے مطالبے کی بھی تائید کا اعلان کیا گیا۔چیئرمین پی ٹی آئی سے ملاقات کے موقع پر قرارداد کی بھی متفقہ منظوری دی گئی ،قرار داد کے مطابق پاکستان کلمہ لا اِلہ اِلا اللہ محمد رسول للہ کی بنیاد پر معرض وجود میں آنے والی ایک اسلامی جمہوری ریاست ہے، قرادِ مقاصد کی روشنی میں ریاست پاکستان میں اقتدار اعلی کی واحد مالک خدا کی ذات ہے،عوام قرآن و سنت کے اصولوں کے تابع ایک منتخب جمہوری نمائندہِ ایوان کے ذریعے ان اختیارات کے استعمال کا حق رکھتے ہیں، چیئرمین تحریک انصاف نے بطور وزیراعظم پاکستان دنیا بھر میں اسلام کی سربلندی و توہین رسالت ۖ جیسے قبیح و شرمناک عمل کے انسداد کیلئے غیر معمولی محنت کی۔

 

قرارداد کے مطابق اسلاموفوبیا کے تدارک اور مسلم امہ کے مابین اتحاد و یگانگت کے فروغ کے لئے بھی عمران خان کی خدمات غیر معمولی خدمات ہیں، اسلام کے تہذیبی و ثقافتی ورثے کے تحفظ کے حوالے سے چئیرمین تحریک انصاف کے تصورات و خدمات لائق تقلید و قابل تحسین ہیں، جنرل اسمبلی سے اسلاموفوبیا کے انسداد کی قرارداد کی متفقہ منظوری عمران خان کی غیرمعمولی خدمت کی عکاسی کرتی ہے، سیرت رسولۖ کی تعلیمی نصاب میں شمولیت اور رحمت اللعالمین اتھارٹی کا قیام بھی عمران خان کی اسلام و پیغیمبر اسلام سے گہری عقیدت کی علامتیں ہیں۔قرارداد کے مطابق ایک سنگین سازش و مداخلت کے نتیجے میں منتخب جمہوری حکومت کا تختہ الٹنے پر گہری تشویش ہے، خفیہ مراسلے کے مندرجات پر قومی سلامتی کمیٹی کے دو اجلاسوں کے اعلامیوں کی تائید کرتے ہیں، ایک طاقتور و بااختیار عدالتی کمیشن کی تشکیل اور کھلی تحقیقات کے ذریعے سازش میں شامل عناصر کی نشاندہی کے عمران کے مطالبے کی توثیق کرتے ہیں۔

https://urdu.arynews.tv/imran-khan-azadi-march-ulmae-karam/

براہ کرم ہمیں فالو اور لائک کریں:

پڑھنے کے پچھلے

چین کے ہانگ کانگ خصوصی انتظامی علاقے میں چیف ایگزیکٹو کا انتخاب

پڑھنے کے اگلے

کرس گیل پذیرائی نہ ملنے پر آئی پی ایل سے دور ہوگئے

ایک جواب دیں چھوڑ دو

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔