PK Press

ن لیگ کی آفر کیوں چھوڑی؟ پرویز الٰہی نے کئی راز کھول دیے

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک )پاکستان مسلم لیگ (ق) کے رہنما اور پنجاب کے نامزد وزیراعلیٰ چوہدری پرویز الٰہی نے کہا ہے کہ مسلم لیگ (ن) میں اصل طاقت نوازشریف اور ان کی بیٹی ہیں ،شہباز شریف پارٹی صدر تو ہیں لیکن نوازشریف کی ویٹو پاور کو ختم نہیں کرسکتے ،ہمارا قدرتی اتحاد پی ٹی آئی سے ہی بنتا ہے ،طارق بشیر چیمہ کو منانے کی کوششیں اس وقت بھی جاری ہیں ۔ منگل کی رات نجی ٹی وی کو انٹرویو میں پرویز الٰہی نے ایک سوال پر کہا کہ نہ صرف میں خود ایوان کی

 

 

اکثریت حاصل کروں گا بلکہ وفاق میں بھی مجھے حکومت بچانے کا جو ٹاسک ملا ہے اسے بھی پورا کروں گا ۔جہانگیرترین گروپ سے ہمارے سارے معاملات طے پاچکے ہیں ،مجھے وزیراعظم کو ملنے والے دھمکی آمیز خط کے بارے میں کچھ معلوم نہیں او نہ میری اس حوالے سے کوئی بات ہوئی ہے ۔
پرویز الٰہی نے کہا کہ شہبازشریف 35سال بعد ہمارے گھر آئے اور اس کے بعد ہمیں کھانے پر بلایا لیکن ہم نہیں گئے دراصل ہمیں پتہ چلا کہ شہباز شریف کے ساتھ وہ لوگ آن بورڈ نہیں تھے جنہیں ہونا چاہیے تھا ،مریم بی بی گروپ کو یہ پسند نہیں تھا کہ پانچ سات سیٹوں والوں کو سب کچھ دے دیں لہذا ہم ان کے ساتھ احتیاط سے چلتے رہے ۔پرویز الٰہی نے کہا کہ ہمیں یہ بھی اطلاع ملی کہ وزیراعلیٰ بننے کی صورت میں مدت تین سے چار ماہ ہوگی ،انہوں نے کہا کہ ہماری خوش قسمتی اور ان کی بدقسمتی ہے کہ ہمیں چیزوں کا پہلے سے علم ہوجاتا ہے، دونوں جانب لوگ ہوتے ہیں جو ایسی چیزیں بتاتے رہتے ہیں ۔

پرویز الٰہی نے کہا کہ حکومتی وفد کی جانب سے جب ہمیں یشکش کی گئی تو پارٹی میں مشاورت ہوئی اورسب نے یہ کہا کہ ہمارا فطری اتحاد پی ٹی آئی سے بنتا ہے ، پہلے مشورے میں طارق بشیر چیمہ بھی موجود تھے، بعد میں ان کو یہ چیز پسند نہیں آئی تاہم ان سے رابطہ ہے لیکن وہ ابھی تک وزیراعظم کے خلاف ووٹ دینے کے اپنے موقف پر قائم ہیں ۔وزیراعظم سے آج بھی ملا ہوں انہوں نے کہا ہے کہ آپ کو وزیراعظم نامزد کرنے پر میری پارٹی میں اچھا رسپانس آیا ہے ۔
پرویز الٰہی نے کہا کہ وہ بطور وزیراعلیٰ اپنا انتخاب بھی کرالیں گے اور حکومت کے خلاف عدم اعتماد کو بھی ناکام بنانے کی ذمہ داری پور کر لیں گے ۔جہانگیر ترین سے گروپ سے رابطہ ہوا ہے ،کل ہماری ملاقات طے ہے ، ایم کیوایم بھی آن بورڈ ہے ۔

براہ کرم ہمیں فالو اور لائک کریں:

پڑھنے کے پچھلے

چوہدری شجاعت سے فرخ خان کی ملاقات،پرویز الٰہی کی بطور وزیراعلیٰ نامزدگی پر مبارکباد

پڑھنے کے اگلے

اپوزیشن کا پرویز الٰہی کے خلاف بھی عدم اعتماد لانے کا فیصلہ

ایک جواب دیں چھوڑ دو

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔