PK Press

چین کا کچھ مما لک میں مقامی باشندوں کے انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں پر تشویش کا اظہار

 جنیوا میں اقوام متحدہ میں چین کے مستقل مشن کے وزیر جیانگ ڈوان نے اقوام متحدہ کی انسانی حقوق کونسل کے 49ویں اجلاس میں یکساں خیالات رکھنے والے ممالک کی جانب سے مشترکہ تقریر کرتے ہوئے کچھ ممالک میں مقامی باشندوں کے انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں پر تشویش کا اظہار کیا اور انسانی حقوق کونسل سے مطالبہ کیا گیا کہ وہ اس مسئلہ پر توجہ دے اور ضروری کارروائی کرے۔
مشترکہ بیان میں کہا گیا ہے کہ گزشتہ چند صدیوں میں متعلقہ ممالک نے مقامی باشندوں پر وحشیانہ ظلم اور استحصال کیا، ان کے بنیادی انسانی حقوق اور آزادیوں کو پامال کیا، مقامی لوگوں کی زمینوں اور وسائل کو لوٹا، مقامی لوگوں کو قتل کیا اور ثقافتی نسل کشی کی۔ انہوں نے مقامی بچوں کو زبردستی انضمام کے لیے نام نہاد "بورڈنگ اسکولوں” میں داخل کیا ، "بورڈنگ اسکولوں” میں قبائلی بچوں کے ساتھ بدسلوکی کی گئی اور بڑی تعداد میں غیر معمولی اموات کے واقعات رونما ہوئے۔ متعلقہ سچائی پر آج تک پردہ پڑا ہے۔
مشترکہ بیان میں متعلقہ ممالک پر زور دیا گیا کہ وہ فوری طور پر اپنی غلطیوں کو درست کریں، مقامی لوگوں کے حقوق کی خلاف ورزیوں کی تحقیقات کریں اور ان کا احتساب کریں، متاثرین کو معاوضہ دیں، اور مقامی لوگوں کے خلاف امتیازی سلوک کو مکمل طور پر ختم کریں۔ اس کے علاوہ انسانی حقوق کونسل سے بھی مطالبہ کیا گیا کہ وہ متعلقہ ممالک کی طرف سے مقامی باشندوں کے انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوں پر توجہ دے اور ضروری کارروائی کرے۔

براہ کرم ہمیں فالو اور لائک کریں:

پڑھنے کے پچھلے

اے ڈی بی نے پاکستان کیلئے 30 کروڑ ڈالر قرضے کی منظوری دیدی

پڑھنے کے اگلے

اسلاموفوبیا ایک حقیقت،ہمیں اپنا بیانیہ آگے بڑھانا ہوگا،وزیراعظم

ایک جواب دیں چھوڑ دو

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔