PK Press

پیٹ کی بیماریوں کی وجوہات جاننے کے لیئے مزید تحقیق کی ضرورت ہے، حنید لاکھانی

Hunaid Lakhani

Hunaid Lakhani

  کراچی : سماجی رہنما و ماہر تعلیم حنید لاکھانی نے کراچی میں دائیریا وبا کے تیزی سے پھیلاءو پر تشویش کا ا ظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ سندھ کے مختلف شہروں میں اس وقت سینکڑوں افراد اس وبا کی لپیٹ میں ہیں خاص طور پر چھوٹے بچوں کی بڑی تعدادہے جو دست اور اسہا ل کی بیماری کا شکار ہورہے ہیں ماہر ین طب کے مطابق گیسٹرواینٹراءٹس کی وبا پھیل چکی ہے جس کے نتیجے میں سینکڑوں افراد نجی اور سرکاری ہسپتالوں میں آرہے ہیں ، آلودہ پانی ڈائیریا اور دست جیسی بیماریوں کا سبب بنتا ہے ،
ان خیالات کا ا ظہارا نہوں نے حنید لاکھانی سیکرٹریٹ سے جاری کردہ بیان میں کیا، حنید لاکھانی نے کہا کہ آلودہ پانی پیٹ اور جگر کے امراض کے پھیلاءو کا بھی سبب بنتا ہے ڈائیریاسمیت مختلف آلودہ پانی سے پھیلنے والی بیماریوں سے بچاءو کے لیئے آگاہی مہم چلانے کی ضرورت ہے شہریوں کو اس بات سے آگاہ کرنا ہوگا کہ آلودہ پانی کے استعمال سے کیسی کسی مہلک بیماریوں کا شکار ہونے کا خطرہ ہوتا ہے جو کہ کبھی کبھار جان لیوا بھی ثابت ہوجاتی ہیں انہو ں نے کہا کہ پاکستان میں مقامی سطح پر پھیلنے والی بیماریوں سے بچاءو اور ان کی وجوہات کو جانچنے کے لیئے تحقیق کرنے کی ضرور ت ہے وفاقی حکومت کو چاہیے کہ نوجوان ڈاکٹرز اور میڈیکل کے طلباء کے لیئے بیماریوں پر تحقیق اور آرٹیکل کی تحریر پر وظیفے مقرر کرے جس سے نہ صرف بیماریوں کی ویکسین بنانے میں مدد ملے گی بلکہ ینگ ڈاکٹرز کا تحقیق کی جانب رجحان بڑھے گا جس کے نہایت مثبت اور سود مند نتاءج سامنے آئیں گے ، انہوں نے کہا کہ سندھ میں بہت سارے ایسے علاقے ہیں جہاں آج بھی لوگوں کو پینے کے صاف پانی کی سہولیات میسر نہیں ہیں کراچی جیسے بڑے شہر میں بھی لوگوں کو پینے کے پانی کے حصول کے لیئے شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے شہریوں کو پینے کے صاف پانی کی فراہمی حکومت کی اہم ترین ذمہ داری ہے پانی زندگی کی اہم ترین ضرورت ہے ، انہوں نے مزید کہا کہ حکومت کو چاہیے کہ ہر علاقے میں آبادی کے تناسب کے حساب سے پینے کے صاف پانی کے پلانٹس لگائیں جہاں سے لوگ پینے کا صاف پانی مفت حاصل کرسکیں اور اس پلانٹ کی ہر ماہ باقاعدہ صفائی اور مکمل چیک اپ ہو کہ تا کہ شہریوں کے صاف پانی کی فراہمی کے مسائل حل ہو سکیں ۔
براہ کرم ہمیں فالو اور لائک کریں:

پڑھنے کے پچھلے

اسلاموفوبیا ایک حقیقت،ہمیں اپنا بیانیہ آگے بڑھانا ہوگا،وزیراعظم

پڑھنے کے اگلے

اظہر علی خواب پوراہوگیا

ایک جواب دیں چھوڑ دو

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔