PK Press

حکومت بجٹ میں سگریٹ پر ٹیکس میں اضافہ کرے، کولیشن فار ٹوبیکو کنٹرول پاکستان

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک )سول سوسائٹی کی 100 سے زائد تنظیموں کے اتحاد، کولیشن فار ٹوبیکو کنٹرول پاکستان (CTC-Pak) نے حکومت پر زور دیا ہے کہ وہ اگلے بجٹ میں سگریٹ پر ٹیکس میں اضافہ کرے کیونکہ تمباکو نوشی صحت کے لیے خطرات کا باعث بن رہی ہے اور پاکستان میں صحت کے بجٹ پر تمباکو مصنوعات کا اضافی اور غیر ضروری بوجھ ہے ۔سی ٹی سی پاک کے نیشنل کوآرڈینیٹر ذیشان دانش نے ایک بیان میں کہا ہے کہ ٹیکسوں میں اضافے کے ذریعے تمباکو کی مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ تمباکو کے استعمال کو کم کرنے کا سب سے مثر طریقہ ہے۔

 

 

زیادہ قیمتیں تمباکو نوشی کرنے والوں اور خاص طور پر نوجوانوں کی تمباکو نوشی سے حوصلہ شکنی کر سکتی ہیں اور موجودہ صارفین کو سگریٹ نوشی ترک کرنے کی ترغیب دے سکتی ہیں۔ مزید برآں، ٹیکسوں میں اضافہ حکومت پاکستان کو تمباکو کے استعمال کو کم کرنے اور غیر مواصلاتی بیماریوں (NCDs) سے ہونے والی اموات کو کم کرنے کے اس کے ہدف کو پورا کرنے میں بہت مدد کرے گا کیونکہ تمباکو کا استعمال NCDs کا ایک بڑا عنصر ہے۔مزید برآں، پچھلے کچھ سالوں سے تمباکو مصنوعات پر ٹیکس نہ لگانے اور ٹمباکو مصنوعات کی کم قیمت کے باعث پاکستان تمباکو کی سگریٹ ٹیکس سکور کارڈ میں خراب کارکردگی کا مظاہرہ کرنے والے ممالک میں شامل ہے یہ سکور کارڈ ، ٹیکس کے نظام کی مضبوطی کا جائزہ لیتا ہے،

پٹھوں کی مضبوطی کے لیے  ورزشیں

https://pkpress.net/2021/11/08/%d9%be%d9%b9%da%be%d9%88%da%ba-%da%a9%db%8c-%d9%85%d8%b6%d8%a8%d9%88%d8%b7%db%8c-%da%a9%db%92-%d9%84%db%8c%db%92-%da%a9%d9%88%d9%86%d8%b3%db%8c-%d9%88%d8%b1%d8%b2%d8%b4%db%8c%da%ba-%da%a9%d8%b1%d9%86/

تحقیقی تخمینہ ظاہر کرتا ہے کہ اگر تمباکو پر ٹیکس نہیں بڑھایا گیا تو 2022-23 میں پاکستان میں 260,000 سے زیادہ نئے صارفین سگریٹ نوشی شروع کر دیں گے۔ حکومت کو اس بات پر غور کرنا چاہیے کہ پاکستان میں روزانہ کی بنیاد پر 1200 سے 1500 کم عمر بچے سگریٹ نوشی شروع کر دیتے ہیں اور خدشہ ہے کہ قیتوں میں کمی کے باعث یہ تعداد مزید بڑھے گی۔سی ٹی سی پاک کے نیشنل کوآرڈینیٹر ذیشان دانش نے اس بات پر تشویش ظاہر کرتے ہوئے کہا کہ جولائی 2019 سے سگریٹ کی خوردہ قیمتیں میں اضافہ نہیں ہوا جس کے نتیجے میں 2021-22 میں سگریٹ زیادہ سستی ہو ئیں ، اور اگر ٹیکسوں میں اضافہ نہ کیا گیا تو 2022-23 میں مزید سستی ہو کر زیادہ سے زیادہ لوگوں کی پہنچ میں ہوں گی ،اعداد و شمار بتاتے ہیں کہ اگر قیمتیں مستحکم رہیں تو اس سے تمباکو کے استعمال کی استطاعت میں زبردست اضافہ ہو جائے گا جبکہ تمباکو کے استعمال کی استطاعت کو کم کرنا وقت کی اہم ضرورت ہے۔

براہ کرم ہمیں فالو اور لائک کریں:

پڑھنے کے پچھلے

چوہدری برادران کی شہباز شریف سے اہم ملاقات متوقع

پڑھنے کے اگلے

عدم اعتماد کے دوران انتظامیہ فریق بنی تو سزا کے لیے تیار رہے،اپوزیشن رہنما

ایک جواب دیں چھوڑ دو

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔