PK Press

حکومتی ارکان کو چھپائے جانے کا انکشاف،پرویز الٰہی نے حقیقت بتادی

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)متحدہ اپوزیشن کی جانب سے عدم اعتماد سے متعلق بعض حکومتی ارکان کو چھپائے جانے کا انکشاف ہوا۔ نجی ٹی وی کے مطابق اپوزیشن کی طرف سے حکومتی ایم این ایز کو سندھ ہائوس ،فارم ہائوس میں چھپایا گیا جبکہ سندھ ہائوس کے باہر سندھ پولیس کی اضافی نفری بھی تعینات کردی گئی ہے، کچھ ارکان کو پارلیمنٹ لاجز میں بھی چھپایا گیا ہے ۔اپوزیشن کی طرف سے جن ارکان کو چھپایا گیا ان کے نام حکومت کو پتا چل گئے ہیں ان میں تین خواتین اراکین بھی شامل ہیں ۔ حکومت نے اپوزیشن سے بیک ڈور رابطے کے ذریعے اپنے ارکان کی واپسی کا پیغام بھیجا ہے جبکہ اپوزیشن کو خبردار بھی کیا ہے کہ اگر ارکان کو رضاکارانہ طور پر واپس نہ کیا گیا تو انہیں دن دیہاڑے بازیاب کرایا جائے گا ۔ ادھر حکومت کی طرف سے ارکان کو بازیاب کرائے جانے کے ڈر سے اپوزیشن نے چھپائے گئے ارکان کو سکھر منتقل کرنے کا فیصلہ کیا ہے ۔نجی ٹی وی کے مطابق تین خواتین ارکان کو آئندہ چوبیس گھنٹے میں سکھر منتقل کردیا جائے گا، ارکان کی سکھرمنتقلی پہلے بذریعہ طیارہ کرنے کی منصوبہ بندی کی گئی تھی تاہم بعد میں بذریعہ روڈ منتقل کرنے کا فیصلہ کیا گیا۔ ذرائع کے مطابق حکومتی ارکان کو پیپلزپارٹی کے سینئر ترین رہنما کی گاڑی میں سکھر منتقل کیا گیا۔

حکومت چھوڑی ہے یانہیں؟ پرویز الہٰی نے بتا دیا

علاوہ ازیں حکومتی اتحادی جماعت ق لیگ کے رہنما چوہدری پرویز الٰہی نے بھی تصدیق کی ہے کہ پی ٹی آئی کے دس سے بارہ ارکان اپوزیشن کی سیف کسٹڈی میں ہیں ۔انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی کے دس سے بار ہ ارکان ہم سے ملنے آئے تھے ۔ نجی ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے پرویز الٰہی نے کہا کہ ان کی شہباز شریف سے فون پر بات ہوئی ہے ابھی تک ملاقات نہیں ہوئی ، بی اے پی اور ایم کیو کا جھکائو فی الحال اپوزیشن کی طرف ہے جبکہ ہمارا مشاورتی عمل ابھی جاری ہے،گزشتہ روز کے اپنے بیان پر قائم ہیں،ہمارا پرانا فیصلہ ابھی برقرار ہے،نئے فیصلے کےلئے ملاقاتیں ہورہی ہیں۔انہوں نے کہا کہ جہانگیرترین گروپ مائنس بزدار کی بات کررہا ہے ۔ پرویز الٰہی نے کہا کہ پی ٹی آئی کے ترجمان آف دی ریکارڈ کہتے ہیں کہ ہمارے پاس نیب اورایف آئی اے ہے ، نیب نے مونس الٰہی کو کلیئر قراردیا ہے ۔

تصادم کا خدشہ

پرویز الٰہی نے کہا کہ اسلام آباد میں لوگ اکٹھے کئے جانے سے تصادم کا خدشہ ہے ، پہلے کبھی ایسا نہیں ہوا کہ حکومت نے جلسہ کیا ہو،شیخ رشید وزیراعظم کو مشورہ دیں کہ تصادم سے نقصان ہوگا۔انہوں نے کہا کہ شیخ رشید کو ہر چیز کی جلدی ہوتی ہے ، وہ مشرف دور میں اسپیکر قومی اسمبلی بننا چاہتے تھے،شیخ رشید سے کہا تھا کہ آپ کو وزارت مل رہی ہے پنگے بازی نہ کریں ۔چوہدری پرویز الٰہی نے کہا کہ نوازشریف کو بھاری اکثریت ملی تو انہوں نے شیخ رشید کو کوئی وزارت نہیں دی ،اس موقع پر شیخ رشید نے نوازشریف کو گالیاں دیں کہ ہم نے ان سے کہا تھا خدا کا خوف کریں ،ہم آ پ کو وزارت دیں گے ۔انہوں نے کہا کہ عثمان بزدار سے رشتہ ختم نہیں کیا ، ان کے والد کہتے تھے کہ انہیں ساتھ لے کر چلنا ہے ، عثمان بزدار خود ٹکریں ماریں گے تو انہیں سمجھانے کا کیا فائدہ ہوگا۔

براہ کرم ہمیں فالو اور لائک کریں:

پڑھنے کے پچھلے

حکومت چھوڑی ہے یانہیں؟ پرویز الہٰی نے بتا دیا

پڑھنے کے اگلے

عدم اعتماد ،ہمارے نمبرز اتحادیوں کے بغیر بھی پورے ہیں، بلاول بھٹو

ایک جواب دیں چھوڑ دو

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔