PK Press

سپریم کورٹ نے مونال ریسٹورنٹ کھولنے کا حکم دے دیا

سپریم کورٹ نے مونال ریسٹورنٹ کھولنے کا حکم دے دیا

 اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)سپریم کورٹ آف پاکستان نے اسلام آباد کے مونال ریسٹورنٹ کو ڈی سیل کرنے کا حکم دیدیا ہے۔

 اسلام آباد ہائیکورٹ کا حکم نامہ معطل

تفصیلات کے مطابق پیر کو عدالت نے اسلام آباد ہائیکورٹ کا غیر دستخط شدہ مختصر حکم نامہ معطل کردیا۔
جسٹس مظاہرنقوی نے ریمارکس دئیے کہ کیا یہ بادشاہت ہے کہ شہنشاہ نے فرمان جاری کیا اور دستخط سے پہلے ہی عمل ہوگیا۔24فروری کو سپریم کورٹ نے مونال ریسٹورنٹ کوعارضی بنیادوں پر کھولنے کی استدعا مسترد کردی تھی۔

 

عدالت نے قرار دیا تھا کہ ہائیکورٹ کا تفصیلی فیصلہ آنے کے بعد ہی کوئی ٹھوس حکم دے سکیں گے اوراگر2 ہفتے تک

 

تفصیلی فیصلہ نہ آیا تو مناسب حکم جاری کرینگے۔

 

مونال ریسٹورنٹ کے وکیل نے عدالت کو بتایا تھا کہ دستخط ہونے تک حکمنامہ میں تبدیلی ہوسکتی ہے،وائلڈ لائف بورڈ کیس میں فریق نہیں تھا، بغیرتحریری حکم کیسے قبضہ لے سکتا ہے؟

اس علاقے میں مونال کے علاوہ 13 ریسٹورنٹ مزید چل رہے ہیں لیکن ہائیکورٹ نے مونال کو بند کردیا جبکہ دیگر کے خلاف انکوائری کا حکم دیا گیا ہے۔

 

جسٹس اعجاز الاحسن نے ریمارکس دئیے تھے کہ تکنیکی طور پر آپ کی بات درست ہے،وزارت دفاع کی فریق بننے کی استدعا پر فی الحال فیصلہ نہیں کرسکتے۔

 

ہائیکورٹ کا تفصیلی فیصلہ آنے تک وزارت دفاع کی درخواست زیرالتوا رہے گی۔ایڈیشنل اٹارنی جنرل نے کہا تھا کہ مونال کی زمین وفاق کی ملکیت ویٹنری فارمز کو دی گئی ہے،

ویٹنری فارمز جی ایچ کیو کے ماتحت ہیں، ہائیکورٹ نے قرار دیا کہ نیشنل پارک کی زمین ویٹنری فارمز کو نہیں دی جا سکتی۔جسٹس منیب اختر نے ریمارکس دئیے تھے کہ مناسب ہوگا کہ وزارت دفاع انٹراکورٹ اپیل میں اپنا موقف پیش کرے۔عدالت نے محکمہ وائلڈ لائف کی فریق بننے کی استدعا منظور کرتے ہوئے سماعت 2 ہفتے کیلئے ملتوی کردی تھی۔

براہ کرم ہمیں فالو اور لائک کریں:

پڑھنے کے پچھلے

افسوسناک واقعہ ،شوہر نے بیوی ،سسر اور سالے سمیت 4افراد کو قتل کردیا

پڑھنے کے اگلے

سوشل میڈیا پرکپل شرما شو کے بائیکاٹ کا مطالبہ

ایک جواب دیں چھوڑ دو

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔