PK Press

ہمیں نچلے طبقے کی خواتین کے حقوق کا خیال بھی رکھنا چاہیئے ،خاتون اول

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)خاتون اول بیگم ثمینہ علوی نے کہا ہے کہ پاکستان میں خواتین باوقار طریقے سے آگے بڑھ رہی ہیں،حکومت خواتین کے حقوق کے تحفظ کے لئے ہرقسم کے اقدامات اٹھا رہی ہے،نچلے طبقے کی خواتین کو اوپر اٹھانے کے لئے وزیراعظم اور صدرپاکستان دن رات کوشاں ہیں۔ .

 

ان خیالات کا اظہار انہوں نے پیر کو مقامی ہوٹل میں اسلام آباد گروپ اور وومنز پارلیمنٹری کاکس کے زیراہتمام عالمی یومِ خواتین کی مناسبت سے منعقدہ ایک تقریب سے خطاب میں کیا۔ اس موقع پر محفل مشاعرہ کا انعقاد کیا گیا اور وبا سے نمٹنے میں اہم کرداراداکرنے والی خواتین کی خدمات کے اعتراف میں اعزازی سرٹیفکیٹس سے نوازا گیا۔ اس موقع پر اپنے خطاب میں بیگم ثمینہ عارف علوی نے کہا کہ خواتین کا عالمی دن ایک اہم دن ہے۔ مائیں، بہنیں اور بیٹیاں قوم کا فخر ہیں۔ حکومت خواتین کے حقوق کے لئے اہم قانون سازی سمیت دیگر اقدامات اٹھا رہی ہے۔ خواتین پروقار طریقے سے آگے بڑھ رہی ہیں۔ ہمیں نچلے طبقے کی خواتین کے حقوق کا خیال بھی رکھنا چاہیئے۔

 

انہوں نے کہا کہ ہماری حکومت خواتین کو آگے لانے کے لئے آسان قرضے اور فنی تعلیم فراہم کررہی ہے۔ ایسے اقدامات سے خواتین مردوں کے شانہ بشانہ آگے بڑھنے کے قابل ہو سکیں گی۔ وومنز پالیمنٹری کاکس کی چیئرپرسن ، رکن قومی اسمبلی منزہ حسن نے کہا کہ خواتین کا عالمی دن ان کی ہمت اور جرات کے اعتراف کا دن ہے۔ وومن پارلیمنٹری کاکس خواتین کے مسائل حل کرنے کا پلیٹ فارم ہے۔ اس ادارے نے خواتین کو پارلیمانی امور اور قانون سازی میں نمائندگی دلائی اور خواتین کے لئے انتہائی اہم قانون سازی کی گئی۔ علاوہ ازیں ہم نے پارلیمانی فیلوشپ پروگرام کا آغاز اور معذور افراد کے لئے قانون سازی بھی کی۔ ہم بیگم ثمینہ علوی کی قیادت میں چھاتی کے سرطان کے حوالے سے خواتین میں آگہی پیدا کررہے ہیں جس کے مثبت اثرات سامنے آ رہے ہیں۔

 

اس موقع پر اپنے خطاب میں ڈاکٹر محمد امجد نے بیگم ثمینہ علوی، منزہ حسن اور تمام شرکاکا شکریہ ادا کیا اور کہا کہ ہم عورتوں کے حقوق کی آگہی کے لئے حکومت کا ہرممکن ساتھ دیں گے۔

.اسلام آباد گروپ غیر سیاسی بنیادوں پر صرف وفاقی دارالحکومت کی تعمیروترقی کے لئے کام کررہا ہے

انہوں نے کہا کہ اسلام آباد گروپ غیر سیاسی بنیادوں پر صرف وفاقی دارالحکومت کی تعمیروترقی کے لئے کام کررہا ہے۔ وقت نے ثابت کیا کہ صدر ایوب کا دارالحکومت اسلام آباد میں منتقل کرنا ملکی سلامتی اور تحفظ کے لئے ضروری تھا۔ ہم چاہتے ہیں کہ اسلام آباد کو ماسٹر پلان کے تحت تعمیر کیاجائے۔ وفاقی دارالحکومت کے شہری اور دیہی علاقوں میں خواتین کی تعلیم اور صحت کے لئے کوئی قابل ذکر سہولت نہیں ہے۔ ہم چاہتے ہیں کہ شہری اور دیہی علاقوں میں خواتین کے لئے جدید ہسپتال، کالجز، یونیورسٹی اورفنی تعلیم کے لئے مثالی ادارے قائم کئے جائیں۔

محفل مشاعرہ میں حصہ لینے والی خواتین میں سمیرا حمید، ڈاکٹر افشاں ملک، فوزیہ بہرام، راشدہ ماہین، صائمہ آفتاب، فرح رضوی، فرخ خان، طاہرہ رسول، ڈاکٹر عنبرین صلاح الدین، حمیدہ شاہین، ڈاکٹر رخشندہ اور یاسمین حمیدشامل تھیں۔ وبا کے دوران نمایاں خدمات سرانجام دینے پر بیگم ثمینہ عارف علوی، منزہ حسن اور ڈاکٹر محمد امجد نے ثانیہ حمید، شائستہ حبیب اللہ، ڈاکٹر ارم نوید، ڈاکٹر سارا اسلم، ایس پی آمنہ بیگ، اقراجہانزیب، ڈاکٹر ثنا ملک، ڈاکٹر نادیہ جدون، اور نائلہ چوہان کو اعزازی سرٹیفکیٹس سے نوازا۔

براہ کرم ہمیں فالو اور لائک کریں:

پڑھنے کے پچھلے

نااہل مشیر وزیراعظم کو بند گلی میں لے آئے،غلام مصطفی ملک

پڑھنے کے اگلے

حالات تیزی سے عمران خان کے ہاتھ سے نکل رہے ہیں،چوہدری پرویز الٰہی

ایک جواب دیں چھوڑ دو

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔