PK Press

وزیراعظم آج پیٹرول 10 روپے سستا کرنے کا اعلان کریں گے،پرویز خٹک

پشاور(مانیٹرنگ ڈیسک)وفاقی وزیردفاع پرویزخٹک نے کہا ہے کہ وزیراعظم عمران خان آج قوم سے خطاب میں پیٹرول 10 روپے سستا کرنیکا اعلان کریں گے۔نوشہرہ میں تقریب سے خطاب کرتے ہوئے وفاقی وزیر پرویز خٹک نے کہا کہ بین الاقوامی سطح پرپیٹرول سستا تو نہیں مل رہا لیکن ڈھائی سو ارب روپے حکومت دے گی جس سے پیٹرول کی قیمت کم ہوگی اور 4 ماہ تک پیٹرول مہنگا نہیں ہو گا۔انہوں نے کہا کہ اگر عالمی سطح پربہتری آئی اور پیٹرول سستا ہوا تو پھر پیٹرول کی قیمتوں میں مزید کمی آجائے گی ۔پرویز خٹک نے کہا کہ بجلی کی فی یونٹ قیمت میں 5 روپے کی کمی کا اعلان ہوجائے گا ۔انہوں نے مزید کہا کہ تیسرااہم اعلان یہ ہوگا کہ بے روزگاربی اے پاس افراد کو ماہانہ 10 سے 20 ہزار روپے دیے جائیں گے۔
دوسری جانب نیپرا نے بجلی کی قیمت میں پانچ روپے 94 پیسے فی یونٹ اضافہ کرنے کی منظوری دیدی ۔نیشنل الیکٹرک پاور ریگولیٹری اتھارٹی (نیپرا)نے بجلی کی قیمت میں 5 روپے 94 پیسے فی یونٹ اضافے کی منظوری دے دی،فیصلے کے بعد صارفین پر 50 ارب کااضافی بوجھ پڑے گا ،اضافے کااطلاق کے الیکٹرک،لائف لائن صارفین پرنہیں ہوگا ۔بجلی کی قیمت میں اضافہ جنوری کی فیول ایڈجسٹمنٹ کی مدمیں کیاگیا۔چیئرمین نیپرا کی سربراہی میں بجلی کی قیمتوں میں اضافے کے لیے دائر درخواست کی سماعت ہوئی۔ سنٹرل پاور پرچیزنگ ایجنسی(سی پی پی اے)نے ماہانہ فیول ایڈجسٹمنٹ کی مد میں بجلی کی قیمتوں میں 6 روپے 10 پیسے فی یونٹ اضافے کی درخواست کی۔چئیرمین نیپرا نے پوچھا کہ جنوری میں ایل این جی کم جبکہ ڈیزل اور فرنس آئل زیادہ استعمال کیوں ہوا؟۔حکام نے جواب دیا کہ طلب کے مقابلے میں ایل این جی کی دستیابی بہت ہی کم تھی۔چئیرمین نیپرا توصیف فاروقی نے کہا کہ اس ماہ انڈسٹری نے 16 فیصد زیادہ بجلی استعمال کی ہے، اگر طویل مدتی معاہدوں سے ایل این جی زیادہ آتی ہے تو اتنا بوجھ کیسے پڑتا ہے؟۔نیپرا نے سماعت کے بعد بجلی کی قیمت میں 5 روپے 94 پیسے فی یونٹ اضافے کی منظوری دے دی، جس کے نتیجے میں بجلی صارفین پر 58 ارب روپے کا اضافی بوجھ پڑے گا۔ اس اضافے کا اطلاق لائف لائن اور کے الیکٹرک حکام پر نہیں ہوگا۔نیپرا حکام نے کہا کہ جنوری میں ایل این جی کمی سے7 ارب 74 کروڑ روپے کا اضافی بوجھ پڑا، اس سے صارفین پر 92 پیسے فی یونٹ کا اضافی بوجھ پڑا، اگرسولر اور ونڈ والے لائسنس یافتہ پلانٹس چلتے تو ایک روپے مزید کمی ہوتی۔

ادھر میڈیا رپورٹس کے مطابق عالمی منڈی میں پٹرولیم مصنوعات کے نرخ بڑھنے کے سبب یکم مارچ سے پٹرول 5 روپے، ڈیزل اور مٹی کے تیل کی قیمت میں 4 روپے اضافے کا خدشہ ہے۔عوام تیار ہو جائیں، عالمی منڈی میں خام تیل کی قیمت بڑھنے اور روپے کی قدر گرنے کے باعث یکم مارچ سے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں مزید اضافے کا خدشہ ہے، پٹرول کی قیمت 5 روپے اضافے سے 165 روپے فی لٹر تک پہنچ سکتی ہے۔ڈیزل کی قیمت 4 روپے اضافے سے 158 روپے فی لٹر سے بھی تجاوز کرسکتی ہے۔ مٹی کے تیل کی فی لٹر قیمت 4 روپے اضافے سے 130 روپے تک پہنچنے کا خدشہ ہے جبکہ لائٹ ڈیزل کی قیمت 3 روپے اضافے سے 127 روپے فی لٹر سے بھی تجاوز کرسکتی ہے۔ واضح رہے کہ پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں ردوبدل کا حتمی فیصلہ وزیر اعظم کریں گے۔

براہ کرم ہمیں فالو اور لائک کریں:

پڑھنے کے پچھلے

ایرانی فضائیہ کے سربراہ بریگیڈیئر جنرل حامد واحدی کا دورہ پاکستان

پڑھنے کے اگلے

2021 میں چینی سائنس کی ٹاپ ٹین پیش رفت جاری

ایک جواب دیں چھوڑ دو

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔