PK Press

نواز شریف کو بیرون ملک جانے کی اجازت دینا غلطی تھی،وزیراعظم

وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ یہ سب ڈرے ہوئے ہیں، نواز شریف کو بیرون ملک جانے کی اجازت دینا غلطی تھی ، نواز شریف خیبرپختونخوا جاتا تو کہتا تھا کدھر ہے نیا پاکستان، خیبرپختونخوا کسی کو دوسری باری نہیں دیتا، خیبرپختونخوا نے دوسری بار بھی پی ٹی آئی کو ووٹ دیا، فضل الرحمان کو مولانا نہیں کہوں گا، پہلی بار اسمبلی ڈیزل کے بغیر سولر پر چل رہی ہے، ڈیزل سب کو اکٹھا کر کے ہر3ماہ بعد کہتا ہے حکومت کو گرا دو،20سال سے یہ ایک دوسرے کو ڈاکو کہہ رہے ہیں،کوئی شک نہیں مہنگائی ہے، اس لیے سارا وقت یہی سوچتا ہوں کہ عوام کیلئے کیا کروں۔
جمعہ کو منڈی بہائوالدین میں جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ نواز شریف کو کبھی ایک بیماری تو کبھی دوسری لگی تو کبھی پلیٹ لیٹس کی بیماری جس کی وجہ سے ہمیں لگتا کہ آج گیا، کل گیا، ہم نے بہت بڑی غلطی کی کہ نواز شریف کو باہر جانے کی اجازت دے دی۔

انہوں نے کہا کہ نواز شریف جب خیبرپختونخوا جاتا تھا تو کہتا تھا کہ کہاں ہے نیا خیبرپختونخوا، جب 2018میں انتخابات ہوئے تو جو خیبرپختونخوا جو کسی کو دوسری باری نہیں دیتی اس خیبرپختونخوا نے دوسری بار پاکستان تحریک انصاف کو ووٹ دیئے، میں یہ پیش گوئی کرنا چاہتا ہوں کہ یہ چوروں کا ٹولہ، ڈاکوئوں کا گلدستہ میں ایک شخص ہے جسے میں مولانا نہیں کہوں گا، مولانا ڈیزل سب کو اکٹھا کر کے ہر دو مہینے بعد حکومت کو گرانے کی بات کرتا ہے، پہلی بار اسمبلی ڈیزل کے بغیر چل رہی ہے، ڈیزل بارہواں کھلاڑی بنا ہوا ہے۔

وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ ہمارے دور میں خیبرپختونخوا میں تیزی سے غربت میں کمی آئی، منڈی بہائوالدین والو، اپوزیشن ڈری ہوئی ہے، یہ سب چور ڈاکو ڈرے ہوئے ہیں، مولانا فضل الرحمان ان کو ڈرا رہا ہے کہ جلدی سے عمران خان کی حکومت گرائو ورنہ 2023کا الیکشن بھی گیا، ان کے ملازم ملک مقصود چپڑاسی کے اکائونٹ میں اتنا پیسہ کیسے آ گیا، 15ہزار تنخواہ میں مقصود چپڑاسی تو شوگر مل میں ملازم تھا، ایف آئی اے کو پتہ چلا کہ چار ارب روپیہ مقصود چپڑاسی کے اکائونٹ میں آیا ہے،

 

پتہ چلنے پر راتوں رات پہلے چھوٹے میاں نے بیٹے پھر داماد کو لندن بھجوادیا، بھگوڑے بڑے میاں کے بیٹے بھی لندن میں بیٹھے ہیں، ایک بڑا بھگوڑا میاں ہے اور دوسری طرف چھوٹا میاں ہے، چھوٹے میاں کا تو ایک دل بڑا کمزور ہے، شہباز شریف نے جسٹس قیوم کو فون کیا کہ تین سال نہیں پانچ سال کی سزا دو، اگر چوری نہیں کی تو پھر ڈر کس بات کا ہے،منشی اسحاق ڈار کو کون بھول سکتا ہے، ان سب کو عمران خان کا ڈر ہے، کسی کو این آر او نہیں ملے گا، حدیبیہ پیپر ملز میں مشرف سے این آر او لیا گیا، اب سپریم کورٹ کے چیف جسٹس پر کوئی ڈنڈے سے حملہ نہیں کرتا،

 

بریف کیس چلے کوئٹہ کے بینچ کو خریدا گیا، یہ کسی کو یاد نہیں آتا، اب مریم صاحبہ کہتی ہیں کہ میرے پاس ٹیپس موجود ہیں، کیسز سے بچنے کیلئے پرانے چیف جسٹس پر ایک فیک ٹیپ بنائی گئی، فیک ٹیپ بنانا سیاستدان کا کام نہیں مافیاز کا کام ہے، مریم بی بی بھی کیس سے ڈری ہوئی ہیں اور ججز کو بھی ڈرا رہی ہیں، مریم بی بی بتائیں کہ 80کروڑ روپے چوہدری شوگر مل میں کہاں سے آئے، شہباز شریف کو مقصود چپڑاسی کی فکر لگ گئی ہے، شہباز شریف کو بھی پتہ ہے کہ جب بھی کیس چلا تو یہ بچنے والا نہیں ہے، شہباز شریف اگر بے قصور ہے تو عدالت سے التواء کیوں لیتے ہوئے کیس چلنے دو روزانہ، عدالتیں آزاد ہیں، شہباز شریف نے بیٹے کو ملک سے باہر کیوں بھگایا ہے، میں جب تک زندہ ہوں کہ ملک کی لوٹی ہوئی دولت واپسی تک ان کا پچیھا نہیں چھوڑوں گا، یہ عدم اعتماد اس لئے چاہتے ہیں تا کہ عمران خان کی حکومت جلد از جلد چلی جائے، ہم ہر طرح کے حالات کا مقابلہ کرنے کیلئے تیار ہیں، اب آپ کو شکست نہیں ہو گی بلکہ آپ سیدھا جیل جائیں گے،

 

میں ہر وقت سوچتا رہتا ہوں کہ پاکستان کی عوام کو کس طرح ریلیف دوں، صحافی یہ بھی بتایا کریں کہ ملک میں مہنگائی کی وجوہات کیا ہیں، کورونا کی وجہ سے پوری دنیا بند ہو گئی، چیزوں کی فراہمی رک جانے سے اشیاء کی قیمتوں میں اضافہ ہوا، عوام پر بوچھ کم کرنے کیلئے ٹیکسز اور ڈیوٹی میں کمی کی تا کہ عوام پر بوجھ نہ پڑے، ٹیکسز اور ڈیوٹی کم کرنے سے حکومت کو 170ارب روپے کا نقصان ہوتا ہے، پیپلز پارٹی کے دور میں آج سے زیادہ مہنگائی تھی، امریکہ، برطانیہ، جرمنی اور دیگر ممالک میں آج ریکارڈ مہنگائی ہے، باہر سے آنے والی اشیاء کی قیمتیں ڈبل ہو گئی ہیں، ملک یک سمت درست اور برآمدات میں ریکارڈ اضافہ ہوا ہے، آج ریکارڈ ترسیلات زر آرہی ہیں، بیرون ملک مقیم پاکستانی ہمارا قیمتی اثاثہ ہیں، کبھی زراعت میں اتنا پیسہ نہیں آیا جتنا اب آرہا ہے، ملک میں پہلی بار خارجہ پالیسی بنی ہے، پاکستان اب کسی سے ڈکٹیشن نہیں لیتا،

 

ہمارے دور میں ڈرون اٹیک کیوں نہیں ہوتے، پہلی بار آئی ٹی کی برآمدات 70فیصد بڑھی ہے، اب غریب آدمی 10لاکھ روپے تک ہیلتھ کارڈ سے مفت علاج کرا سکتا ہے، وزیراعلیٰ پنجاب کو صحت کارڈ کیلئے 400ارب مختص کرنے پر مبارکباد پیش کرتا ہوں، جب تک قوم کا پیسہ واپس نہیں آتا نہ کسی کو چھوڑوں گا نہ کسی کو این آر او ملے گا، شریف خاندان کیلئے اعلان ہے کہ آپ کے ہر پلان کیلئے کپتان تیار بیٹھا ہے،

 

چھوٹے چور کو جیل میں ڈالنے اور بڑے چور کو چھوڑنے سے قوم تباہ ہو جاتی ہے، دو بڑے خاندانوں کو کھانسی بھی ہوتی تھی تو وہ لندن بھاگ جاتے تھے، دو بڑے خاندانوں کو کیا پتہ کہ پاکستانی کن مصیبتوں کا سامنا کرتا تھا، اگر کسی مجرم کو تقریر کی اجازت دی جائے تو جیلوں میں قید دوسرے مجرموں کا کیا قصور ہے، میں نے سپریم کورٹ میں کھڑا ہو کر ثابت کیا کہ میں صادق و امین ہوں۔

براہ کرم ہمیں فالو اور لائک کریں:

پڑھنے کے پچھلے

تنہا سفر کرنے والی خواتین کے لیے مدینہ منورہ دنیا کا محفوظ ترین شہر قرار

پڑھنے کے اگلے

عالیہ بھٹ کی فلم گنگو بائی کاٹھیا واڑی پر ایک نیا تنازع سامنے آگیا

ایک جواب دیں چھوڑ دو

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔