PK Press

لندن میں رہنا تھا اس لیے اثاثے بنائے،شہباز شریف

shahbaz sharif

shahbaz sharif

لاہور،سابق وزیراعلی پنجاب اور مسلم لیگ (ن ) کے صدر شہباز شریف نے کہا ہے کہ کرپشن سے پیسہ بنایا ہوتا تو پاکستان واپس نہ آتا، لندن میں رہنا تھا اس لیے اثاثے بنائے۔تفصیلا ت کے مطابق شہباز شریف خاندان کے خلاف منی لانڈرنگ ریفرنس کی سماعت کے موقع پر شہباز شریف اور حمزہ شہباز لاہور کی احتساب عدالت میں پیش ہوئے۔دوران سماعت شہباز شریف نے کہا کہ مجھ پر الزام تھا کہ میں نے کرپشن کی، تمام کاغذات پاکستانی حکام نے برطانیہ بھیجے،2004 میں پاکستان آنے کی کوشش کی لیکن واپس بھیج دیا گیا۔انہوں نے کہا کہ کرپشن سے پیسہ بنایا ہوتا تو پاکستان واپس نہ آتا، لندن میں رہنا تھا اس لیے اثاثے بنائے، میں نے 1000 ارب روپے کئی منصوبوں میں بچائے، میں قبر میں بھی چلا جاں تب بھی حقائق نہیں بدلیں گے۔ایس ای سی پی کے ایڈیشنل رجسٹرار غلام مصطفی کے بیان پر شہبازشریف کے وکیل کی جانب سے جرح کی گئی۔امجد پرویز ایڈوکیٹ نے استفسار کیا کہ کیا شہباز شریف کبھی رمضان شوگر مل کے ڈائریکٹر رہے ہیں؟ جس پر غلام مصطفی نے بتایا کہ شہباز شریف کبھی رمضان شوگر مل کے ڈائریکٹر نہیں رہے۔شہباز شریف کا اس موقع پر کہنا تھا ان کا بس چلے تو مجھے پاکستان کی تمام کمپنیوں کا ڈائریکٹر بنا دیں۔

براہ کرم ہمیں فالو اور لائک کریں:

پڑھنے کے پچھلے

بلاول کے استاد نالائق ہیں، لکھی ہوئی پرچیاں دی جاتی ہیں، شاہ محمود قریشی

پڑھنے کے اگلے

بالآخر 18فروری کو شہبازشریف پر منی لانڈرنگ کیس میں فردجرم عائد ہوگی، فوادچوہدری

ایک جواب دیں چھوڑ دو

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔