PK Press

قبرص میں ہماری مساجد پر حملہ کرنیوالوں کو بھاری قیمت چکانا ہوگی’رجب طیب اردوان

turk president

turk president

ترک صدر رجب طیب اردوان نے یونانی قبرص میں مسجد پر ہوئے حملے کے بارے میں کہا ہے کہ ہماری عبادت گاہوں پر اس طرح کی تخریب کاری میں ملوث ہونے کی آپ کو بھاری قیمت ادا کرنا پڑے گی، ہم ان واقعات میں ملوث افراد کی تلاش میں ہیں۔صدر اردوان نے یہ بیان قطر کے دورے پر روانگی سے قبل استنبول کے اتا ترک ایئر پورٹ پر دیا۔یونانی قبرص کی انتظامیہ کے مسجد پر نسل پرست حملے پر ردعمل ظاہر کرتے ہوئے صدر اردوان نے کہا کہ جنوبی قبرص میں کی جانے والی اس کارروائی پر ہم خاموش نہیں رہیں گے۔ ہم شمالی قبرص ترک جمہوریہ کے صدر ایرسن تاتار کے بیان سے متفق ہیں۔ ان مساجد کی حفاظت کرنا جنوبی قبرص کی انتظامیہ کی ذمہ داری ہے۔شمالی قبرصی ترک جمہوریہ کے محکمہ مذہبی امور کی طرف سے جاری کردہ بیان میں کہا گیا ہے کہ لارناکا جامع مسجد پر 2 دسمبر کی شام کو ایک بد نما حملہ کیا گیا۔ حملے میں کوئی جانی نقصان نہیں ہوا تاہم یونانی قبرصی پولیس کی جانب سے تحقیقات کے نتیجے میں ایک شخص کو گرفتار کیا گیا ہے۔شمالی قبرص کے صدر ایرسن تاتار نے لارناکا کی جامع مسجد کو نذر آتش کرنے کی کوشش کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا تھا کہ ماضی میں بھی لارناکا جامع مسجد کو نذر آتش کرنے کی کوشش کی گئی تھی اور اس حملے نے ایک بار پھر ظاہر کیا ہے کہ یونانی ذہنیت تبدیل نہیں ہوئی۔ انہوں نے کہا کہ 1963 سے 1974 کے دوران ہماری سینکڑوں مساجد پر حملے کیے گئے اور انہیں تباہ کیا گیا۔

براہ کرم ہمیں فالو اور لائک کریں:

پڑھنے کے پچھلے

محمد عامر کا کورونا ٹیسٹ پھر مثبت’ آئسولیشن میں چلے گئے

پڑھنے کے اگلے

بھارتی فضائیہ کا ہیلی کاپٹرتباہ، جنرل بپن راوت سمیت 13 افراد ہلاک

ایک جواب دیں چھوڑ دو

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔