PK Press

’وفاقی کابینہ کی ہدایت‘ پر اب اسلام آباد میں مندر نہیں بنے گا

اسلام آباد کے ترقیاتی ادارے کیپٹل ڈیویلپمنٹ اتھارٹی (سی ڈے اے) نے اسلام آباد میں ہندوؤں کے مندر کی تعمیر کے لیے مختص جگہ کی الاٹمنٹ کینسل کر دی ہے۔
اس حوالے سے سوموار کو سی ڈی اے کے وکیل جاوید اقبال وینس نے اسلام آباد ہائی کورٹ کو آگاہ کر دیا۔
واضح رہے کہ جسٹس عامر فاروق نے ایک شہری کی مندر کی تعمیر کے خلاف درخواست پر سماعت کی تھی۔
دوران سماعت سی ڈی اے کے وکیل جاوید اقبال وینس نے عدالت کو بتایا کہ ’مندر کی تعمیر وفاقی کابینہ کی ہدایت پر کینسل کر دی گئی۔‘
’وفاقی کابینہ نے ہدایت کی کہ گرین ایریاز میں جن بلڈنگز کی تعمیرات نہیں ہوئیں کینسل کر دیں۔‘
خیال رہے کہ 2017 میں نیشنل کمیشن برائے انسانی حقوق کے احکامات پر سی ڈی اے نے اسلام آباد کی ہندو پنچایت کی درخواست پر سیکٹر ایچ نائن ٹو میں چار کنال کا پلاٹ الاٹ کیا تھا۔
اس مندر کا سنگ بنیاد رکھنے کی تقریب بھی منعقد ہوئی تھی جس کے مہمان خصوصی تحریک انصاف کے رکن قومی اسمبلی اور پارلیمانی سیکریٹری برائے انسانی حقوق لال ملہی تھے۔
تاہم اس پر مذہبی رہنماؤں اور علما نے تحفظات کا اظہار کیا تھا۔
براہ کرم ہمیں فالو اور لائک کریں:

پڑھنے کے پچھلے

افغانستان کی صورتحال اور ٹی ٹی پی سے مذاکرات، قومی سلامتی کمیٹی کا اجلاس

پڑھنے کے اگلے

مہنگائی کا سونامی: ماریہ میمن کا کالم

ایک جواب دیں چھوڑ دو

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔